چین میں پہلے مسافر ڈرون نے اڑان بھر لی

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک) ڈرون اب سواریاں بھی منزل تک پہنچائے گا ، چین میں دنیا کے پہلے مسافر بردار ڈرون نے اڑان بھر لی۔ تفصیلات کے مطابق چین میں پہلے مسافر بردار ڈرون نے پرواز بھر لی ہے جوکہ ایک مسافر کو منزل تک پہنچانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ ڈرون سو کلو گرام تک کے مسافر کو سو کلومیٹر فی گھٹہ کی رفتار سے سطح سمندر کی بلندی سے منزل تک پہنچانے کی صلاحیت رکھا ہے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق ڈرون مسافر طیارہ مسافر کے ساتھ صرف 23 منٹ تک اڑان بھر سکتا ہے۔

The post چین میں پہلے مسافر ڈرون نے اڑان بھر لی appeared first on JavedCh.Com.

Reference: JavedCh.Com

کیا موبائل فون کینسر کا باعث بنتے ہیں؟

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) عرصے سے ایسی رپورٹس سامنے آتی رہی ہیں کہ موبائل فون سے خارج ہونے والی شعاعیں کینسر کا خطرہ بڑھاتی ہیں اور اب امریکی محکمہ صحت نے اس کی کسی حد تک تصدیق کردی ہے۔ نیشنل انسٹیٹوٹ ہیلتھ کی تحقیق کے ابتدائی نتائج میں عندیہ دیا گیا ہے کہ موبائل فون سے خارج ہونے والی شعاعیں مخصوص اقسام کے کینسر کا خطرہ بڑھا سکتی ہیں۔

اس تحقیق کے دوران اس طرح کی شعاعیں جو کہ موبائل فون سے خارج ہوتی ہیں، کا تجربہ چوہوں پر کیا گیا تو چھ فیصد کے دل میں کینسر تشکیل پانے لگا۔ مزید پڑھیں : کیا موبائل فون انسانی صحت کیلئے حقیقی خطرہ ہیں؟ یہ بنیادی طور پر دو ریسرچز تھیں جن میں موبائل فون ریڈی ایشن کے اثرات کا جائزہ لیا گیا۔ تحقیق میں انتباہ کیا گیا کہ اس حوالے سے مزید تحقیق کی ضرورت ہے کہ عام لوگوں میں موبائل فون کا استعمال کینسر کا خطرہ کتنا بڑھاتا ہے اور یہ شعبہ باعث تشویش ہے۔ گزشتہ دو سال کے دوران نیشن انسٹیٹوٹ آف ہیلتھ کے نیشنل ٹوکسولوجی پروگرام کے محققین چوہوں کو مختلف اقسام کی موبائل فون ریڈیو فریکوئنسی ریڈی ایشن سے متاثر کرتے رہے۔ 2016 میں تحقیق کے آغاز میں محققین نے ابتدائی ڈیٹا جاری کرتے ہوئے خبردار کیا کہ موبائل فون ریڈی ایشن اور کینسر کے درمیان ممکنہ تعلق موجود ہے۔ اسمارٹ فون اور دیگر وائرلیس ڈیوائسز نیٹ ورکس سے کنکٹ ہونے کے بعد اور انفارمیشن ٹرانسمیٹ کرنے کے دوران لو فریکوئنسی مائیکرو ویو ریڈی ایشن خارج کرتی ہیں ، یہ توانائی اتنی طاقتور نہیں جتنی الٹراوائلٹ ریڈی ایشن یا ایکسرے انرجی، مگر نئی رپورٹس نے ان شواہد کو تقویت دی ہے کہ مائیکرو ویو ریڈی ایشن بھی طبی خطرات کا باعث بن سکتی ہیں۔ یہ بھی پڑھیں : موبائل فونز کے بارے میں 8 حیران کن حقائق اس تحقیق کے دوران چوہوں کو روزانہ 18 گھنٹے تک زیادہ سطح کی ریڈی ایشن سے متاثر کیا گیا۔

ماہرین نے خبردار کیا کہ ڈیوائسز سے خارج ہونے والی ریڈی ایشن کی سطح میں مسلسل اتار چڑھاﺅ زیادہ خطرے کا باعث بنتا ہے اور 2016 میں جو نتائج سامنے آئے تھے، اب تک کی تحقیق نے انہیں زیادہ ٹھوس کیا ہے۔ انہوں نے تحقیق کے آغاز اور آخر میں یہ دریافت کیا کہ چوہوں میں دل کے مقام پر رسولی کے کیسز سامنے آئے، تاہم دیگر اقسام کے کینسر کے واقعات زیادہ سامنے نہیں آئے۔ محققین کا کہنا تھا کہ چوہوں کے برعکس انسانی دل میں اس طرح کا کینسر عام نہیں مگر قلب کے عضلات ضرور موبائل فون ریڈی ایشن کا ہدف بن سکتے ہیں۔

محققین کا کہنا تھا کہ نر چوہوں میں رسولی کی شرح زیادہ تھی کیونکہ ان کے جسم مادہ کے مقابلے میں زیادہ ریڈی ایشن جذب کرتے تھے جس کی وجہ ان کے جسموں کا زیادہ حجم تھا۔ محققین نے واضح کیا کہ چوہوں کو جس طرح کی ریڈی ایشن کا ہدف بنایا گیا اس کی سطح اس سے کہیں زیادہ تھی جس کا سامنا انسانوں کو موبائل فونز کے استعمال کے دوران ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی انسانوں پر اس کا تجزیہ نہیں کیا گیا مگر یہ قابل تشویش امر ہے اور اب ہم جانتے ہیں کہ موبائل فونز سے کینسر کے ممکنہ خطرات کا باعث بننے والا عناصر کیا ہے۔

The post کیا موبائل فون کینسر کا باعث بنتے ہیں؟ appeared first on JavedCh.Com.

Reference: http://javedch.com/healthنوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین صحت کے با رے ميں کسی بھی مضمون کے حوالے سے اپنے ڈاکٹر سےلازمي مشورہ لیں۔

HEC introduce HAT for scholarships and admission to MS/MPhil programmes

The Higher Education Commission (HEC) has released a Higher Education Aptitude test (HAT) which will be conducted by the Education Testing Council. This test is compulsory to attain HEC scholarships and get admission in MS/MPhil programme in public as well as private universities. The deadline for the online registration is January 31, 2018, at etc.hec.gov.pk.This HAT results will be dureable for two years for all the applicants.

The applicants will be clear from a 100 percent grading system comprising 40 marks for quantitative reasoning, 30 marks for verbal reasoning, and 30 marks for analytical reasoning.

The HAT will be organized in four separate groups termed as HAT-1 for engineering and IT, HAT-2 for management science and business education, HAT-3 for arts and humanities and social sciences, and HAT-4 for agriculture and veterinary sciences, biological sciences, medical sciences and physical sciences.

The applicants have been guided to carefully select the correct HAT category according to their qualification. Also, they can choose their test center from the list that is available on the official website. The roll number slips will be issued to successful candidates through courier at the provided address and the same can also be downloaded from the e-portal after the completion of the due procedure.

Reference: www.technologytimes.pk

Pakistan invent latest satellite-based technique of CO2 mapping

Ministry of Climate Change started a project in Pakistan Environmental Protection Agency titled as “Geomatic Center for Climate Change and Sustainable Development”. The project with latest techniques and evaluation methods encourages the application of Satellite Remote Sensing (SRS), Geographical Information System (GIS) and Geographical Positioning System (GPS) technologies in environmental monitoring and decision-making. Geomatic Centre has already initiated the process of mapping CO2 emissions in Pakistan using GIS.

Officials of EPA, SUPARCO and Ministry gathered at a seminar on “Role of Geographical Information System (GIS) in Monitoring CO2 Emissions” and briefed the students, media persons and environmentalists about the new project and its utility. The seminar focused on capacity building and mixing skills of different public and private stakeholders on (GIS) and Remote Sensing (RS) technologies.

CO2 is one of the greatest donors to the global warming which ultimately impacts the climate change. A GIS is a logical choice for a system to house the CO2 source and sink data, as it could visually display spatial relationships and do queries and screening analyses easily.

The Geomatic Center with its enormous efforts and technical proficiency prepared the Environmental Atlas of Islamabad which was inaugurated by the Honorable Parliamentary Secretary for Climate Change, who appreciated the efforts of the Geomatic Center for organizing this seminar and thanked the participating organizations for making it successful.

Reference: www.technologytimes.pk

Geology Congress 2018

Conference Series Ltd invites all the participants across the globe to attend the “5th International Conference on Geological and Environmental Sustainability” which is going to be held at Bali, Indonesia during August 13-14, 2018 with the theme of “An Insight into Solid Earth and Soil materials for futuristic advancements”. We are so glad to organize “GEOLOGY CONGRESS 2018” at Indonesia ; after a similar series of conferences in consecutive years at USA over the last several years which met with great achievement in Business Conferencing.

Geology Congress 2018 is a 2-day event offering the Exhibition, at venue to showcase the new and emerging technologies and have wider sessions involving Keynote presentation, Oral, YRF (student presentation), poster, e-poster presentations. World-renowned speakers and eminent delegates across the globe attending the conference, to share their valuable presentation on the most recent and advanced techniques, developments, and the newest updates are the prominent features of the conference.

For abstract submission and registration for the conference, please use the below links:

https://geology.conferenceseries.com/abstract-submission.php

https://geology.conferenceseries.com/registration.php

Reference: www.technologytimes.pk