کانگو میں ایبولا وائرس پھر سر اٹھانے لگا،54 افراد متاثر

افریقی ملک جمہوریہ کانگو میں ایبولا وائرس کا شکار مزید 4 مریض سامنے آئے ہیں۔

 وزارت صحت کے ترجمان نے بتایا اب تک شہر بینی میں 20 ہلاکتیں ہوچکی ہیں اور ویکسین کے باوجود صورتحال  کافی سنگین ہے ۔

 یاد رہے کہ کانگو میں 24 جولائی کو ایبولا کی وبا پھیلنے کی وارننگ جاری کی گئی تھی۔

 اس سال مئی میں پھیلنے  والی اس وبا کی وجہ سے 33 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ54 اس میں مبتلا پائے گئے ہیں۔

کانگو میں مجموعی طور پر یہ نواں موقع ہے کہ وہاں ایبولا وائرس کی وجہ سے شہری ہلاکتیں ریکارڈ کی گئیں ۔

پہلی بار اس وائرس کا پتہ 1970 کی دہائی میں چلا تھا اور تب اس انتہائی ہلاکت خیز جرثومے کو مشرقی کانگو میں دریائے ایبولا کی نسبت سے نام دے دیا گیا تھا۔

افریقہ میں پچھلی مرتبہ ایبولا وائرس کی وبا کانگو ہی میں ایک سال سے بھی کم عرصہ قبل دیکھی گئی تھی جب اس وسطی افریقی ملک میں آٹھ شہری اس سے متاثر ہوئے تھے  جن میں سے چار افراد انتقال کر گئے تھے۔

واضح رہے ایبولا وائرس کے پھیلاؤ میں چمگادڑیں بھی اہم کردار ادا کرتی ہیں جو خود مبتلا  ہوئے بغیر دور دراز کے علاقوں تک اس وائرس کو  دیگر  پرندوں، حیوانات اور انسانوں تک پہنچا دیتی ہیں۔

وسطی افریقہ میں اس وائرس سے دو برس قبل ہلاکت خیز وبا پھیلی تھی جس کے نتیجے میں ساڑھے11ہزار افراد کی ہلاکت اورتقریبا 29 ہزار افراد متاثر ہوئے تھے۔

 اب تک اس وائرس کی وبا کا سامنا  گنی، سیرا لیؤن اور لائبیریا  جیسے ممالک کر چکے ہیں۔

 

Reference: http://www.trt.net.tr/urdu

Jazz introduces affordable prepaid bundle for Hajj pilgrims


For the first time ever, Jazz introduce a prepaid bundle offer for Hajis, whereby they can call their loved ones back home without having to worry about affordability.

Called the Saudi Bundle, the offer includes incoming and outgoing call charges of PKR 15/min – more affordable and hassle free than the visitor SIMs available in Saudi Arab. 

The Saudi Bundle will also offer subscribers approximately 666 minutes of WhatsApp audio calls or 66 minutes of WhatsApp video calls, so they can share their experience with friends and family back home – WhatsApp will work in Saudi Arabia on this Bundle.  

To activate this offer, subscribers need to dial *7626*1# (with 500 balance in the account) from Pakistan or Saudi Arabia, or simply call 111. In case your roaming is not active in Saudia, then first get it activated with help of someone back in Pakistan by calling 111 and then dial *7626*1#.

Once subscribed, the bundle will be valid for 14 days. This offer is available for Jazz Prepaid customers for the whole 2018.

The post Jazz introduces affordable prepaid bundle for Hajj pilgrims appeared first on Technology Times.

Reference: www.technologytimes.pk

Dr. Arshad Ahmad to join LUMS as the next Vice Chancellor


The Lahore University of Management Sciences (LUMS)  announce the appointment of Dr. Arshad Ahmad, Vice-Provost, Teaching and Learning and Professor of Finance and Business Economics at McMaster University, Canada, as the 5th Vice Chancellor of LUMS.

Dr. Ahmad will assume his Office at the University in end-August, 2018.Sharing his thoughts on his role at LUMS, Dr. Ahmad said, “It is a great privilege to serve Pakistan’s premier institution and I am confident to take LUMS to the next level of excellence. 

As Vice-Provost, Teaching and Learning at McMaster University for the past five years, Dr. Ahmad has also led McMaster’s Paul MacPherson Institute for Leadership, Innovation and Excellence in Teaching.

He has spearheaded several initiatives that continue to enhance McMaster University’s reputation as an international leader in teaching and learning.

Prior to joining McMaster, Dr. Ahmad was Professor of Finance at Concordia University’s John Molson School of Business and has also taught executive programmes, seminars and led workshops around the world.

Dr. Ahmad also brings with him a wealth of consultancy experience across diverse industries in Canada and overseas, including Advertising, Appliances, Banking, Beverages, Engineering, Pharmaceuticals and Technology.

In addition to his expertise in Finance, Dr. Ahmad earned an MBA and PhD in Educational Psychology from McGill University, Canada, and has focused on curriculum design, online and blended learning, approaches to effective teaching strategies and students as partner programmes.

He continues to serve as Chair of the Editorial Board of the International Journal for Students as Partners and as the Chair of Teaching and Learning Canada.

Dr. Ahmad has also led Canada’s Society for Teaching and Learning in Higher Education as its President while also being the Vice President of the International Consortium of Educational Developers. Both these organisations aim to enhance the quality of the student learning experience.

In 1992, Dr. Ahmad was recognised with a lifetime 3M Teaching Fellowship and has several local and international teaching awards to his credit. His departure was announced recently in McMaster’s Daily News.

His accomplishments as the Vice-Provost have been further recognised when McMaster was recently selected as the winner of the Global Teaching Excellence Award by an international jury. 

Dr. Ahmad’s extensive experience and achievements will take LUMS further in its vision of global excellence as he takes this leadership position at LUMS.

Currently, the University ranks amongst the top 50 universities in Asia on QS Graduate Employability Ranking 2018. As an institution, it is closing in on being ranked among the top 100 Universities in Asia.

The post Dr. Arshad Ahmad to join LUMS as the next Vice Chancellor appeared first on Technology Times.

Reference: www.technologytimes.pk

مریخ پر پانی کا بڑا مجموعہ دریافت

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) سرخ سیارہ (مریخ) پر عرصہ داراز سے پانی کی تلاش جاری ہے اور اس سلسلے میں حال ہی میں سائنسدانوں کو کامیابی حاصل ہوئی ہے ۔ مریخ پر ریسرچ کرنے والے ماہرین کو تلاش کے دوران سیارے پر پانی کے بڑے ذخائر کے واضح ثبوت ملے ہیں۔ ریسرچرز کو سرخ سیارے پر مائع پانی سے بھری ایک جھیل کے اشارے ملے ہیں جو سیارے کے جنوبی قطب پر موجود ہے ۔

اور اس کا رقبہ قریب 20 کلومیٹر بتایا گیا ہے۔ اول ماہرین کا خیال تھا کہ نیا دریافت ہونے والا یہ پانی کا بڑا مجموعہ برف کی صورت موجود ہوسکتا ہے اب یورپی خلائی ایجنسی (ای ایس اے) کے مارس ایکسپریس آربٹر پر لگے ریڈار نے سیارے کے برفیلے جنوبی قطب کے نیچے جھیل کی نشاندہی کی ہے۔ اٹلی کے قومی مرکز برائے فزکس سے وابستہ مارس سائنسداں پروفیسر روبرٹو اوریسیائی آربٹر کے ڈیٹا پڑھنے اور تحقیق کرنے والے مرکزی سائنسدان ہیں۔ وہ کہتے ہیں کہ ’ آربٹر کے خاص مارسِس ریڈار نے پانی کی جھیل کو دریافت کیا ہے لیکن یہ کوئی بہت بڑی جھیل نہیں ہے۔‘ اگرچہ مارسِس ریڈار نے پانی کی سطح کے بارے میں کچھ خاص نہیں بتایا ہے لیکن ریسرچرز کا خیال ہے کہ جھیل میں پانی کی گہرائی ایک میٹر کے لگ بھگ ہوسکتی ہے۔ اسی بنا پر کہا جاسکتا ہے یہ برف پگھلنے سے بننے والا کوئی جوہڑ نہیں بلکہ ایک جھیل ہے۔ رسِس ریڈار نے سیارے کے قطب پر شعاعیں پھینک کر بتایا کہ سطح سے ٹکرا کر واپس آنے والی ریڈیائی امواج سے یہاں برف اور گرد کی پرت موجود ہے اور اس کے ڈیڑھ کلومیٹر نیچے مائع پانی موجود ہے۔ ماہرین کے مطابق پانی زندگی کے لیے انتہائی ضروری ہوتا ہے اور اس لحاظ سے یہ ایک حیرت انگیز دریافت ہے۔ تاہم ماہرین نے کہا ہے کہ اس دریافت کے باوجود وہاں زندگی کی کسی شکل کا مل جانا فوری طور پر ممکن نہیں۔ ابتدائی تحقیق کے مطابق جھیل کے پانی میں کئی طرح کے نمکیات موجود ہوسکتے ہیں اور اس طرح وہاں حیات کی موجودگی مشکل ہوسکتی ہے۔

The post مریخ پر پانی کا بڑا مجموعہ دریافت appeared first on JavedCh.Com.

Reference: JavedCh.Com

سورج کی صوتی لہروں اور مناظر پر تحقیقات

سورج کی صوتی لہروں کی یورپی خلائی ایجنسی اور متحدہ امریکہ کے اسپیس  پروگرام  کے ذمہ دار  ادارے ناسا  کے سن اینڈ ہیلیوس فورک  واچ ہاؤس  SOHO نے ریکارڈنگ کی ہے۔

حاصل کردہ صوتی لہروں اور مناظر کو اسٹین فورڈ  ایکسپیری مینٹل فزکس لیبارٹری میں محققین کی جانب فلٹر کرتے ہوئے  قابل مشاہدہ ماہیت دلائی گئی۔

امریکی میری لینڈ کے  گاڈ ڈارڈ خلائی  مرکز میں  واقع ہیلیو فزکس  شعبے کے  چیف  ڈپٹی ڈائریکٹر  الیکس ینگ کا کہنا ہے کہ ہمارے  پاس سورج کے اندرونی حصوں کا مشاہدہ کر سکنے کے آسان  طریقے موجود نہیں۔ کیونکہ سورج کے اندر تک زوم کرنے کی  خصوصیت کی حامل مائیکرو  اسکوپ  فی الحال   تیار نہیں کی جا سکی۔

ینگ  نے علاوہ ازیں   یہ بھی بتایا ہے کہ یہ وائبریشنز سائنسدانوں کو سورج کے اندر رونما ہونے والے دھماکوں اور  کمیتی حرکات و سکنات کے بارے میں معلومات فراہم کرتی ہیں۔ سورج کی سطح پر شمسی توانائی کے بڑے بڑے دریاؤں کا مشاہدہ کیا گیا  ہے۔

Reference: http://www.trt.net.tr/urdu