Telenor Pakistan collaborates with LMKT to provide IBM’s Accurate Weather Forecast to local farmers

PR:  Telenor Pakistan, continuing its efforts to transform the Pakistani agriculture sector which is the primary source of livelihood for millions of Pakistani households, has partnered with LMKT, an IBM partner, to provide farmers across the country with localized and accurate weather forecasting data. The move aims to advance agricultural practices in Pakistan and educate farmers to help them improve their yields by making informed decisions based on latest weather conditions.

Under the agreement, LMKT will be supporting Telenor Pakistan’s goals by implementing an accurate weather forecasting solution that will provide daily and hourly weather forecast at a resolution of 1 sq km from globally recognized platforms. It’s important to note that LMKT uses IBM’s state-of-the-art technology for its weather forecast services. The partnership will enable Telenor Pakistan to drive various agronomic advisory services to stakeholders in the agriculture sector through multiple channels including mobile devices. This will empower more than 5 million Khushaal Zamindaar users across Pakistan and farmers being supported by the CAPP (Connected Agriculture Platform Punjab) program in collaboration with Government of Punjab.

“Being Pakistan’s primary digital lifestyle partners with a strong rural presence, and movers of many industry-first initiatives aimed at transformation of Pakistani agricultural sector, we at Telenor Pakistan know what the sector’s challenges are and how to resolve them effectively,” said Durdana Achakzai, Chief Digital Officer at Telenor Pakistan. “We are pleased to have partnered with LMKT, a leading technology company specializing in geographic information systems, to deliver hyper localized weather advisory to millions of farmers across Pakistan. These advisories are critical for the success of farmers and support our ongoing efforts to empower the Pakistani kissan and modernize our agricultural practices.”

“This agreement with Pakistan’s top telecom and digital services provider, Telenor Pakistan, underpins LMKT’s continuous efforts towards establishing a highly accurate and standardized weather forecasting system in Pakistan,” said Muhammad Haroon Sharif, Vice President GIS, Research & Development LMKT. “We are working closely with different stakeholders including Pakistan Meteorological Department and independent research groups to help various industries that rely on accurate weather forecasting data such as agriculture, renewable energy production and utilities.”

Telenor Pakistan has been working closely with the local governments in Pakistan to empower the country’s farmers through a number of digital advisory services. In December 2015, Telenor launched Khushal Zamindar, a user-friendly Robocall, IVR and SMS content based mobile agriculture service for small-scale farmers. Following its success and the ratio of female farmers using it, Telenor Pakistan launched its women-specific version called Khushaal Aangan in December 2017. In March 2018, Telenor collaborated with the Punjab Agriculture Department to launch Connected Agriculture Platform Punjab (CAPP) to improve farmers’ access to information, financial resources, and market.

LMKT has recently launched real-time, location-based weather information for farmers as part of a digital farming initiative with Government of Punjab’s Department of Agriculture. The initiative aims to improve farming practices in the province by communicating relevant agronomic advisories to farmers.

In today’s fast paced world, mobile is the force behind every emerging innovation changing lifestyles. Keeping in mind the challenges that farmers face in Pakistan, mobile technology offers immense potential to bring about a significant improvement in their lives. Hence, mobile agricultural services are becoming increasingly valuable for the agriculture sector.

Reference: www.technologytimes.pk

فیس بک نے کمیونیکیشن ٹیکنالوجی میں سب کو مات دے دی،جلد کے توسط سے ای میلز او رایس ایم ایس پڑھنے والی ڈیوائس تیار،حیرت انگیز تفصیلات منظر عام پر آ گئیں

لندن(نیوز ڈیسک)فیس بک نے کمیونیکیشن ٹیکنالوجی میں سب کو مات دے دی،جلد کے توسط سے ای میلز او رایس ایم ایس پڑھنے والی ڈیوائس تیار کر لی،ڈیوائس کو صارف کے بازو میں لگا دیا جائیگا اور پھر وہاں یہ مختلف لہروں کی مدد سے سارا کام کریگی۔  غیر ملکی میڈیا کے مطابقکمیونیکیشن ٹیکنالوجی میں ان دنوں ای میل اور ایس ایم ایس وغیرہ کا بڑا چرچا ہے۔مختلف کمپنیاں مختلف طریقوں سے

اپنے صارفین کی سہولت کیلئے وقتاً وقتاً نت نئی چیزیں تیار کرکے پیش کرتی رہتی ہیں۔ اسی سلسلے کو آگے بڑھاتے ہوئے فیس بک والوں نے ایک ایسی ڈیوائس تیار کرلی ہے جس کی مدد سے مستقبل قریب میں جلد کے توسط سے ای میلز اور ٹیکسٹ پڑھنا اور وصول کرنا آسان ہوجائیگا۔ اس حوالے سے فیس بک کا کہناہے کہ اگر یہ ڈیوائس عام ہوگئی تو وہ بہت سارے لوگ جو ہر وقت’’فون کے نشے میں مبتلا‘‘ رہتے ہیں اور آس پاس سے بے خبری اختیار کئے ہوئے ہوتے ہیں انہیں اپنی اس علت سے نجات مل جائیگی۔ یہ ڈیوائس ایک چھوٹی چیز ہے جسے پہنا بھی جاسکتا ہے اور اس کی کارکردگی کچھ یوں ہوگی کہ الفاظ سے ملتے جلتے ارتعاش کی مدد سے سارا کام ہوگا۔ لوگوں کو اپنی جلد، اپنے بازو وغیر ہ پر پیغامات پڑھنے میں آسانی ہوگی۔ اس ڈیوائس کو صارف کے بازو میں لگا دیا جائیگا اور پھر وہاں یہ مختلف لہروں کی مدد سے سارا کام کریگی جو زبان اس طریقے سے جسم پرمرتسم ہوگی وہ تحریری بھی ہوسکتی ہے اور مختلف بولیوں کی شکل میں بھی۔ ابتدائی آزمائش میں یہ ڈیوائس 100الفاظ کی درست خانگی کے قابل دیکھی گئی۔

The post فیس بک نے کمیونیکیشن ٹیکنالوجی میں سب کو مات دے دی،جلد کے توسط سے ای میلز او رایس ایم ایس پڑھنے والی ڈیوائس تیار،حیرت انگیز تفصیلات منظر عام پر آ گئیں appeared first on JavedCh.Com.

Reference: JavedCh.Com

How To Get Apple’s Education Discount On The New iPad 6 (Or Any Other Eligible Product)

Apple’s renewed focus on education following the recent iPad event saw the company highlight that it is making the new tablet available to schools at a special reduced price of just $299.

However, if you are eligible for Apple’s education pricing for one of a number of reasons, then you too can benefit from a discount, making the new tablet $309 rather than the standard $329 everyone else has to pay.

So, how do you qualify? Well, it’s actually fairly simple. If you are either currently enrolled in a college or have been accepted into one (or are the parent of someone who is) then you can get the discount. Faculty members and staff at all grade levels are also eligible for the discount, as are homeschool teachers.

Now, if you’re a student or a faculty member then you will have a college ID or associated email address that can be used to prove that you are who you say you are and, subsequently, eligible for the discount. If you’re a homeschool teacher, though, you don’t actually need to prove anything because it’s impossible for you to do so, at least in the United States, anyway.

Buying via the Apple Education Pricing store is an easy affair – simply pick your hardware from apple.com/us-hed/shop and checkout. It’s like buying from any other version of the Apple Store, so you’re likely already familiar with the process, except, well, it’s cheaper.

At this point, we want to implore people not to just do this because they can, and because Apple does not seem to police it. If you are not a homeschool teacher, then you should obviously pay the same as everyone else. If you are a homeschool teacher, though, or any of the other eligible groups of people, you can get a $309 iPad right now, or if you’d rather a “real” computer, how about a $849 MacBook Air instead?

Reference: http://www.redmondpie.com

کیا موبائل فون کینسر کا باعث بنتے ہیں؟

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) عرصے سے ایسی رپورٹس سامنے آتی رہی ہیں کہ موبائل فون سے خارج ہونے والی شعاعیں کینسر کا خطرہ بڑھاتی ہیں اور اب امریکی محکمہ صحت نے اس کی کسی حد تک تصدیق کردی ہے۔ نیشنل انسٹیٹوٹ ہیلتھ کی تحقیق کے ابتدائی نتائج میں عندیہ دیا گیا ہے کہ موبائل فون سے خارج ہونے والی شعاعیں مخصوص اقسام کے کینسر کا خطرہ بڑھا سکتی ہیں۔

اس تحقیق کے دوران اس طرح کی شعاعیں جو کہ موبائل فون سے خارج ہوتی ہیں، کا تجربہ چوہوں پر کیا گیا تو چھ فیصد کے دل میں کینسر تشکیل پانے لگا۔ مزید پڑھیں : کیا موبائل فون انسانی صحت کیلئے حقیقی خطرہ ہیں؟ یہ بنیادی طور پر دو ریسرچز تھیں جن میں موبائل فون ریڈی ایشن کے اثرات کا جائزہ لیا گیا۔ تحقیق میں انتباہ کیا گیا کہ اس حوالے سے مزید تحقیق کی ضرورت ہے کہ عام لوگوں میں موبائل فون کا استعمال کینسر کا خطرہ کتنا بڑھاتا ہے اور یہ شعبہ باعث تشویش ہے۔ گزشتہ دو سال کے دوران نیشن انسٹیٹوٹ آف ہیلتھ کے نیشنل ٹوکسولوجی پروگرام کے محققین چوہوں کو مختلف اقسام کی موبائل فون ریڈیو فریکوئنسی ریڈی ایشن سے متاثر کرتے رہے۔ 2016 میں تحقیق کے آغاز میں محققین نے ابتدائی ڈیٹا جاری کرتے ہوئے خبردار کیا کہ موبائل فون ریڈی ایشن اور کینسر کے درمیان ممکنہ تعلق موجود ہے۔ اسمارٹ فون اور دیگر وائرلیس ڈیوائسز نیٹ ورکس سے کنکٹ ہونے کے بعد اور انفارمیشن ٹرانسمیٹ کرنے کے دوران لو فریکوئنسی مائیکرو ویو ریڈی ایشن خارج کرتی ہیں ، یہ توانائی اتنی طاقتور نہیں جتنی الٹراوائلٹ ریڈی ایشن یا ایکسرے انرجی، مگر نئی رپورٹس نے ان شواہد کو تقویت دی ہے کہ مائیکرو ویو ریڈی ایشن بھی طبی خطرات کا باعث بن سکتی ہیں۔ یہ بھی پڑھیں : موبائل فونز کے بارے میں 8 حیران کن حقائق اس تحقیق کے دوران چوہوں کو روزانہ 18 گھنٹے تک زیادہ سطح کی ریڈی ایشن سے متاثر کیا گیا۔

ماہرین نے خبردار کیا کہ ڈیوائسز سے خارج ہونے والی ریڈی ایشن کی سطح میں مسلسل اتار چڑھاﺅ زیادہ خطرے کا باعث بنتا ہے اور 2016 میں جو نتائج سامنے آئے تھے، اب تک کی تحقیق نے انہیں زیادہ ٹھوس کیا ہے۔ انہوں نے تحقیق کے آغاز اور آخر میں یہ دریافت کیا کہ چوہوں میں دل کے مقام پر رسولی کے کیسز سامنے آئے، تاہم دیگر اقسام کے کینسر کے واقعات زیادہ سامنے نہیں آئے۔ محققین کا کہنا تھا کہ چوہوں کے برعکس انسانی دل میں اس طرح کا کینسر عام نہیں مگر قلب کے عضلات ضرور موبائل فون ریڈی ایشن کا ہدف بن سکتے ہیں۔

محققین کا کہنا تھا کہ نر چوہوں میں رسولی کی شرح زیادہ تھی کیونکہ ان کے جسم مادہ کے مقابلے میں زیادہ ریڈی ایشن جذب کرتے تھے جس کی وجہ ان کے جسموں کا زیادہ حجم تھا۔ محققین نے واضح کیا کہ چوہوں کو جس طرح کی ریڈی ایشن کا ہدف بنایا گیا اس کی سطح اس سے کہیں زیادہ تھی جس کا سامنا انسانوں کو موبائل فونز کے استعمال کے دوران ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی انسانوں پر اس کا تجزیہ نہیں کیا گیا مگر یہ قابل تشویش امر ہے اور اب ہم جانتے ہیں کہ موبائل فونز سے کینسر کے ممکنہ خطرات کا باعث بننے والا عناصر کیا ہے۔

The post کیا موبائل فون کینسر کا باعث بنتے ہیں؟ appeared first on JavedCh.Com.

Reference: http://javedch.com/healthنوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین صحت کے با رے ميں کسی بھی مضمون کے حوالے سے اپنے ڈاکٹر سےلازمي مشورہ لیں۔

31 فیصد پاکستانی اسمارٹ فونز استعمال کرنے لگے

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) اگر تو آپ کراچی یا لاہور میں مقیم ہو تو ایسا لگتا ہے کہ جیسے ہر ایک کے پاس ہی کم از کم ایک اسمارٹ فون تو ہے۔ مگر پورے پاکستان کی بات کی جائے تو جدید ٹیکنالوجی کی مظہر یہ ڈیوائس کافی نایاب ہے۔ وی آر سوشل اور ہوٹ سیوٹ کی 2018 گلوبل ڈیجیٹل رپورٹ میں دنیا بھر میں انٹرنیٹ، اسمارٹ فون، سوشل میڈیا اور ٹیکنالوجی کی دنیا کے دیگر صارفین کے ڈیٹا پر رپورٹ جاری کی گئی ہے۔

جس میں پاکستانی صارفین کی تعداد بھی درج ہے۔ مزید پڑھیں : 4 چیزیں جو اسمارٹ فونز آپ کے بارے میں اکھٹے کرتے ہیں اس رپورٹ کے مطابق پاکستان میں مجموعی طور پر 82 فیصد افراد کے پاس کسی نہ کسی قسم کا موبائل فون ہے۔ رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ پاکستان میں 31 فیصد افراد اسمارٹ فون استعمال کرتے ہیں جبکہ ڈیسک ٹاپ یا لیپ ٹاپ صارفین 10 فیصد، ٹیبلیٹ استعمال کرنے والے ایک فیصد، 76 فیصد کسی قسم کے ٹیلی ویژن کی ملکیت رکھتے ہیں جبکہ اسمارٹ واچ وغیرہ کے صارفین ایک فیصد ہیں۔ اسی طرح پاکستان میں موبائل پر انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد چار کروڑ سے زائد ہے یا مجموعی آبادی کے بیس فیصد کے قریب انٹرنیٹ کے لیے موبائل کو استعمال کرتے ہیں۔ یہ بھی پڑھیں : پرانا اسمارٹ فون اس احتیاط کے بغیر فروخت نہ کریں رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ ان میں سے 71 فیصد افراد اسمارٹ فون کے ذریعے انٹرنیٹ کی سہولت استعمال کرتے ہیں یا پاکستان میں مجموعی ویب ٹریفک کا 68 فیصد حصہ موبائل فونز جبکہ تیس فیصد ڈیسک ٹاپ کمپیوٹر کے ذریعے انٹرنیٹ استعمال کرتا ہے۔

The post 31 فیصد پاکستانی اسمارٹ فونز استعمال کرنے لگے appeared first on JavedCh.Com.

Reference: JavedCh.Com