اونٹنی کا دودھ ٹائپ ٹو ذیابیطس میں مفید قرار، نئی تحقیق میں حیرت انگیز انکشافات

کراچی(این این آئی)دنیا بھر میں اونٹنی کے دودھ کو استعمال کیا جاتا ہے۔ ایک نئی تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ اونٹنی کا دودھ ٹائپ ٹو ذیابیطس میں مفید ثابت ہوسکتا ہے۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اونٹنی کا دودھ ، دہی اور مکھن وغیرہ اپنی زبردست غذائیت کی وجہ سے عالمی شہرت رکھتے ہیں۔

کیونکہ ان میں وٹامن سی، فولاد، کیلشیئم، انسولین اور پروٹین کی بڑی مقدار پائی جاتی ہے۔ماہرین نے دودھ میں موجود چکنائیوں پر تحقیق کی ہے اگرچہ ہمارے جسم میں اندرونی جلن اور سوزش درحقیقت اس وقت ہوتی ہے جب جسم اندرونی جراثیم سے لڑ رہا ہوتا ہے لیکن موٹاپے اور ذیابیطس کی کیفیت میں اندرونی جسمانی جلن ایک مسلسل وبال بن جاتی ہے۔جسمانی چکنائیوں میں موجود ایک خاص قسم کا خلیہ میکروفیج کہلاتا ہے جو اندرونی سوزش میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ کارڈف میٹروپولیٹن یونیورسٹی میں بائیومیڈیکل سائنسس کے پروفیسر کائتھ مور اور ساتھیوں نے چکنائی میں موجود میکروفیج کو اونٹنی کے دودھ کے لائپڈز(ایک طرح کی چکنائی)میں ملایا اور بغور مطالعہ کیا۔کئی تجربات کے بعد ماہرین جان کر حیران رہ گئے کہ اونٹ کے دودھ کی چکنائیوں نے میکروفیج کو کم کیا بلکہ جلن پیدا کرنے والے ایک پروٹین انفلیمیسوم کو بھی بہت کم کردیا۔اگر تجربہ گاہ کے بعد انسانوں پر یہ کارآمد ہوجاتے ہیں تو ٹائپ ٹو ذیابیطس میں پیدا ہونے والی جلن اور سوزش کو کم کیا جاسکتا ہے۔ اسی مناسبت سے اونٹنی کے دودھ کو ذیابیطس کے مریضوں کے لیے مفید قرار دیا جاسکتا ہے۔ لیکن اونٹنی کے دودھ کے بے تحاشہ فوائد اور بھی ہیں جو اس کے باقاعدہ استعمال سے حاصل ہوسکتے ہیں۔

The post اونٹنی کا دودھ ٹائپ ٹو ذیابیطس میں مفید قرار، نئی تحقیق میں حیرت انگیز انکشافات appeared first on JavedCh.Com.

Reference: http://javedch.com/healthنوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین صحت کے با رے ميں کسی بھی مضمون کے حوالے سے اپنے ڈاکٹر سےلازمي مشورہ لیں۔

پاکستان میں ہر چوتھا فرد ٹائپ 1ذیابیطس کا شکار ہے

کراچی (این این آئی) چھٹی سالانہ ذیابیطس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بین الاقوامی مقررین نے ذیابیطس کو ایک اہم مسئلہ قرار دیا ہے جو کہ انسانی صحت کے ساتھ ساتھ اس کے معمولاتِ زندگی اور معاشی حالات کو بھی متاثر کر تا ہے۔ ممتاز دوا ساز ادارے صنوفی پاکستان اور

ذیابیطس ایسو سی ایشن آف پاکستان (DAP) کی جانب سے اسلام آباد، لاہور اور کراچی میں منعقدہ کانفرنس کے مقررین میں برطانیہ سے آنے والے پروفیسر جیری رے مین، پروفیسررھس ولیمز اور پروفیسر عبد الصمد شیرا شامل تھے۔ مقررین نے اپنے خطاب میں بتایا کہ پاکستان میں بیس سال یا اس سے بڑی عمرکا ہر چوتھا فرد ٹائپ 1ذیابیطس کا شکار ہے۔ ذیابیطس کے باعث پیروں کو لاحق ہونے والی بیماری کے بارے میں بتاتے ہوئے پروفیسر جیری رے مین نے بتایا، ’ذیابیطس کے شکار مریضوں کے خون میں شوگر کی زائد مقدار کے باعث پیروں اور دیگر بیرونی اعضاء میں محسوس کرنے والے اعصاب کام کرنا چھوڑ دیتے ہیں۔ اس مرض کی بروقت تشخیص کے لیے پیروں کا باقاعدگی سے مکمل طبی معائنہ ضروری ہے جس سے فُٹ السر جیسے عوارض سے تحفظ ممکن ہو سکتا ہے‘۔ ذیابیطس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے سیکریٹری جنرل اور انٹرنیشنل ڈایابیٹز فیڈریشن کے اعزازی صدر پروفیسر عبد الصمد شیرا نے ایک صحت مند طرزِ زندگی اپنانے اور ذیابیطس کے باقاعدگی سے معائنے کی اہمیت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک میں ذیابیطس ایک وبائی مرض کی شکل اختیار کر گیا ہے۔ انہوں نے انٹرنیشنل ڈایابیٹز فیڈریشن کی ہدایت ’کم کھائیں اور زیادہ چلیں‘ پر سنجیدگی سے عمل پر بھی زور دیا۔ پروفیسر عبد الصمد نے کہا، ’والدین پانچ سال کی عمر سے ہی بچوں کو فاسٹ فوڈ اور سوڈا مشروبات سے پرہیز کرانا شروع کردیں۔ یہ وزن میں اضافے کا سبب ہیں اور زائد وزن اور موٹاپا ٹائپ 2 ذیابیطس کی اہم وجوہات میں سے ہیں۔ اسکول کی سطح سے ہی ذیابیطس کی تشخیص اور علاج کے لیے قومی صحت پالیسی میں اصلاحات کی ضرورت ہے کیونکہ بروقت تشخیص اور فوری علاج اس بیماری کے باعث لاحق ہونے والی پیچیدگیوں سے بہتر تحفظ فراہم کر سکتے ہیں۔‘

The post پاکستان میں ہر چوتھا فرد ٹائپ 1ذیابیطس کا شکار ہے appeared first on JavedCh.Com.

Reference: http://javedch.com/healthنوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین صحت کے با رے ميں کسی بھی مضمون کے حوالے سے اپنے ڈاکٹر سےلازمي مشورہ لیں۔

سمندر میں موجود پلاسٹک، آکسیجن بنانے والے بیکٹیریا کو متاثر کررہا ہے، سائنسدان

کراچی(این این آئی)ایک سروے رپورٹ کے مطابق سمندر میں موجود پلاسٹک کے کچرے کے سبب آکسیجن بنانے والے بیکٹیریا کی نشوونما متاثرہورہی ہے جو فضا میں 10 فی صدآکسیجن بنانے میں اہم کردار اداکرتے ہیں ۔سائنس دانوں کا خیال ہے کہ یہ بیکٹیریا پلاسٹک میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا سے تباہ ہورہے ہیں ۔اس بیکٹیریا کو پرو کلو روکوکس کہا جا تا ہے ۔یہ ایک قسم کا

سائنو بیکٹیریا ہے اور صرف 30 سال قبل ہی ہم نے اسے دریافت کیا ہے ۔پورے سیارے پر ضیائی تالیف (فوٹو سنتھے سز)کاعمل کرنے والی یہ دنیا کی سب سے چھوٹی قدرتی مشین ہے اور یہ بیکٹیریا پوریکرہ ارض پر بڑی مقدار میںپائے جاتے ہیں ۔یہ نہ صرف پانی کو صحت مند اور تازہ رکھتے ہیں بلکہ ہمیں زندہ رکھنے والی آکسیجن بھی فراہم کرتے ہیں ۔علاوہ ازیں سمندری غذائی چکر کا بھی اہم جزو یہی بیکٹیریا ہیں ۔یہ کاربن سائیکل کا بھی اہم جز وہیں اور یہ قدرتی طور پر فضا میں موجود آکسیجن کی تشکیل بھی کرتے ہیں ۔ ماہرین کا خیال ہے کہ پلاسٹک کا ڈھیر سمندروں میں ان کی توقع سے زیادہ تبدیلیاں کررہا ہے اور یوں بیکٹیریا کی ضیائی تالیف یعنی آکسیجن بنانے کے عمل میں بھی رکاوٹ آرہی ہے ۔ صرف بحرِ اوقیانوس میں ایک مقام پر خردبینی (مائیکرو) پلاسٹک کے دو ٹریلین ٹکڑے موجود ہیں جن سے خارج ہونے والے کیمیائی مرکبات انسان دوست بیکٹیریا پر منفی اثر ڈال رہے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ہم نے لیبارٹری میں تجربات کیے ہیں لیکن اس ضمن میں مزید تحقیق کی ضرورت ہے ۔

The post سمندر میں موجود پلاسٹک، آکسیجن بنانے والے بیکٹیریا کو متاثر کررہا ہے، سائنسدان appeared first on JavedCh.Com.

Reference: JavedCh.Com

ZONG 4G نے شوکت خا نم کینسر ہاسپٹل میں بچوں کے ساتھ ایک بھرپور متحرک دن گزارا

اسلا م آباد 24 مئی 2019 :پاکستان کے نمبر ون ڈیٹا نیٹ ورک ZONG 4G A New Hope” ” کے رضاکاروں نے شوکت خانم کینسر ہاسپٹل ، لاہور میں کینسر کے مرض میں زیر علاج بچوں کے ساتھ ایک دن گزارنے کی مفید سرگرمی میں حصہ لیا ۔”جس معا شرے میں کام کریں ، اسے فائدہ بھی پہنچائیں “کے مقولہ پر عمل کرتے ہوئے ZONG 4G مفید سماجی سر گرمیوں اور مقاصد میں بھر پور حصہ لے رہا ہے۔اس دورہ کا مقصد ہسپتال میں زیر علاج بچوں کے اندر مثبت تحریک پیدا کرنا اور ان کی ہمت کو مزید تقویت دینا تھا۔

ہر جانب خوشیاں اور مسرتیں تقسیم کرتے ہوئے ZONG 4G, A New Hope” ” کے رضاکاروں نے اس دورہ کے دوران متفرق وارڈوں کے اندر نا صرف مریضوں بلکہ ہسپتال کے سٹاف سے بھی شفقت اورخبر گیری کا برتائو کیا ۔رضاکاروں نے بچوں میں تحائف تقسیم کئے اور ان کو مختلف لطائف بھی سنائے جس کے باعث بچے نہایت محظوظ ہوئے اوریہ سب ان کے وہم و گمان سے بہت بڑھ کرتھا اور اس سے ان کو بیماری سے لڑنے کا ایک نیا حوصلہ ملا ۔اس کے ساتھ ساتھ رضاکاروں نے بچوں کو کہانیاں بھی سنائیں جس سے بچوں کو وقت گزارنے کا ایک دلچسپ مشغلہ حاصل ہوا ۔

شوکت خانم میموریل ہاسپٹل، لاہور کی انتظامیہ نے پاکستان نے نمبر ون ڈیٹا نیٹ ورک کی ٹیم کے اس متاثر کن اور دل کو چھو لینے والے اقدام کی بھرپور پذیرائی کی کہ انہوں نے اپنی نہایت مصروف سرگرمیوں سے بچوں کے ساتھ گزارنے کے لئے وقت نکالا۔

” ZONG 4G میں ہم بطور ایک کارپوریٹ سماجی ادارہ جس معاشرے میں اپنے کاروباری امور سر انجام دے رہے ہیں اس معا شرے کی طرف اپنی ذمہ داریوں کو بخوبی سمجھتے ہیں۔ ہم اس بات پر مستقل مزاجی سے عمل پیرا ہیں کے ہم معاشرے میں اصلی معنوں میں وہ تبدیلی لا سکیں جو ہمارا عزم ہے ۔ ادارہ جاتی سطح پر ذمہ داری اور فرض کا احساس ذہن نشین کرتے ہوئے ہماراہدف ہے کہ لوگوں کی زندگیوں پر ایک مفید طریقہ سے اثر انداز ہو سکیں ” کمپنی کے ترجمان نے کہا

ZONG 4G کی اقدار و روایات کے عین مطابق ، معاشرے کو فائدہ پہنچانے کے عزم پر کاربند رہتے ہوئے کمپنی معاشرے کے نظر انداز شدہ طبقات، بچوں ، بوڑھوں اور جسمانی طور پر معذور افراد کی فلاح و بہبود کے لئے بھرپور طور پر متحرک ہے تاکہ معاشرے میں موجود موروثی غیر متوازی روایت کی حوصلہ شکنی کی جا ئے ۔ بطور ایک کارپوریٹ سماجی ذمہ دار شہری کے ، ZONG 4G معاشر ے میں مثبت بدلائو لانے کے لئے مسلسل جستجو کر رہا ہے اور اس کے لئے مستقبل میں ایسے حالات کی تخلیق جن میں سے سماجی تحریک اور بیداری پیدا ہو سرمایہ کاری کر رہا ہے ۔

The post ZONG 4G نے شوکت خا نم کینسر ہاسپٹل میں بچوں کے ساتھ ایک بھرپور متحرک دن گزارا appeared first on JavedCh.Com.

Reference: JavedCh.Com

ملک میں طبی مصنوعات کی درآمدات میں 3.45 فیصد کا اضافہ

اسلام آباد ۔ 21 مئی (اے پی پی) رواں مالی سال کے ابتدائی 10 ماہ کے دوران طبی مصنوعات کی درآمدات میں 3.45 فیصد کا اضافہ ہوا۔ پاکستان بیورو برائے شماریات کے مطابق گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں 89 کروڑ 75 لاکھ ڈالر مالیت کی طبی مصنوعات درآمد کی گئیں جبکہ رواں مالی سال کے دوران ان کی درآمد کا حجم 92 کروڑ 94 لاکھ ڈالر رہا ہے۔

Reference: http://urdu.app.com.pk