اسلام آباد ۔ 9 دسمبر (اے پی پی) سابق ٹیسٹ کرکٹر اور مایہ ناز بلے باز جاوید میانداد نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ کھیل ہی مختلف ممالک کے لوگوں کو اکٹھا کرنے کا واحد ذریعہ ہے، پاکستان اور سری لنکا کے درمیان ٹیسٹ کرکٹ دنیا کو دکھائے گا کہ پاکستان ہر طرح کی کھیلوں کی سرگرمیوں کےلئے محفوظ ملک ہے۔ پیر کو اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے سری لنکا کے سابق کپتان بندولا ورنا پورا اور انہیں بطور مہمان خصوصی راولپنڈی ٹیسٹ میں شرکت کی دعوت دی ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے یہ فیصلہ دونوں سابق کپتانوں کی کرکٹ کےلئے خدمات کو پیش نظر رکھتے ہوئے کیا ہے۔ ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں پاکستان اور سری لنکا کے درمیان پہلا میچ مارچ 1982ءمیں نیشنل سٹیڈیم کراچی میں کھیلا گیا۔ میچ میں پاکستان کرکٹ ٹیم کی قیادت جاوید میانداد اور سری لنکا کرکٹ ٹیم کی قیادت بندولا ورناپورا نے کی تھی۔ میانداد جنہوں نے 1975ءسے 1996ءکے درمیان ٹیسٹ اور ون ڈے میچوں میں پاکستان کی نمائندگی کا اعزاز حاصل ہے نے پاکستان میں ٹیسٹ میچ واپس لانے پر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی کاوشوں کو بھی سراہا۔ جاوید میانداد نے کہا کہ عرصہ دراز سے اپنے وطن میں کھیلوں کے انعقاد کے منتظر شائقین کا حق ہے کہ وہ کرکٹ دیکھیں۔ انہوں نے کہا کہ کھلاڑی اپنے ممالک کے سفیر ہیں اور کھیلوں کو سیاست میں شامل نہیں ہونا چاہئے۔ دونوں ممالک کے درمیان ٹیسٹ سیریز ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا حصہ ہے۔

Reference: http://urdu.app.com.pk

Leave a comment

Post here