اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)لائف ہیکر پر پوسٹ ہونے والے چارٹ کے مطابق بچوں کو ایک مخصوص وقت پر اپنے بستر کا رخ کرنا چاہیے اور اس کا انحصار ان کے نیند سے جاگنے کے اوقات پر ہے۔ 5 سے 12 برس تک کی عمر کے بچوں کے لیے نیند اور جاگنے کے اوقات درج ہیں کہ 5 سالہ بچے کو اس کے جاگنے کے وقت کے حساب سے 6:45 اور 8:15 کے درمیان سونے

کی تیاری کرنی چاہیے۔ جبکہ 12 سالہ بچے 8:15 سے 9:45 کے درمیان کسی بھی وقت سونے کی تیاری کرسکتے ہیں۔ اگر آپ کا 5 سالہ بچہ 6:30 بجے اٹھ جاتا ہے تو انہیں 7:15 بجے بستر پر سلا دینا چاہیے۔ لیکن اگر وہ 7 بجے ہی اٹھ جاتے ہیں تو انہیں 7:30 بجے نیند کے لیے تیار ہوتے ہیں۔ جبکہ ایک 8 سالہ بچہ جو صبح 6:45 بجے اٹھ جاتا ہے تو اس کے لیے یہی بہتر ہے کہ وہ 8:15 بجے سونے کے لیے بستر پر چلے جائے۔ اگر اسی عمر کا بچہ 7:30 بجے اٹھا ہے تو وہ 9 بجے سے پہلے نیند کے لیے تیار نہیں ہوگا۔ بچہ روز رات کو اٹھ جاتا ہے تو اس کی وجوہات یہ ہوسکتی ہیں بچوں کو کتنے گھنٹوں کی نیند کرنی چاہیے؟ نومولود (سے 3 ماہ کے) بچے: 14 سے 17 گھنٹے شیر خوار (4 سے 11 ماہ کے) بچے: 12 سے 15 گھنٹے چھوٹے (ایک سے 2 سال کے) بچے: 11 سے 14 گھنٹے پری اسکول (3 سے 5 سال کے) بچے: 10 سے 13 گھنٹے اسکول جانے والے (6 سے 13 سال کے) بچے: 9 سے 11 گھنٹے ٹوئین اور ٹین ایجر (14 سے 17 سال کے) بچے: 8 سے 10 گھنٹے

The post کس عمر کے بچوں کو کتنے گھنٹے سونا چاہیے؟ appeared first on JavedCh.Com.

Reference: http://javedch.com/healthنوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین صحت کے با رے ميں کسی بھی مضمون کے حوالے سے اپنے ڈاکٹر سےلازمي مشورہ لیں۔

Leave a comment

Post here