کراچی۔ 17 دسمبر (اے پی پی) سری لنکا کرکٹ ٹیم کے کوچ کی ذمہ داری ادا کرنے والے قومی کرکٹ ٹیم کے سابق ہیڈ کوچ میکی آرتھر نے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم کے ساتھ گزارے تین برسوں کا ہر لمحہ دل پر نقش اور یادگار ہے، پاکستان ٹیم کی میرے دل میں جگہ موجود ہے، دوبارہ پاکستان آکر اچھا لگا، پاکستان کے دورہ پر آنے والی سری لنکا کی ٹیم کے کھلاڑیوں میں ٹیلنٹ موجود ہے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار نیشنل اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ میکی آرتھر نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ میری گہری وابستگی اور والہانہ لگاﺅ ہے لیکن اس وقت حریف سائیڈ سے تعلق ہے، مصباح الحق سے کوئی رقابت نہیں، بطور کوچ پاکستان کرکٹ ٹیم کی بہتری کے لئے سوچا، میں نے کوچ کی حیثیت سے ہمیشہ ٹیم کی بہتری کے لیے سوچا اور کیا، میں نے کسی کھلاڑی پر پاکستان ٹیم کے دروازے بند نہیں کیے، کرکٹ میں پسند ناپسند نہیں ہوتی،کھلاڑی کے انتخاب میں کوچ کارکردگی کو مدنظر رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ درست نہیں ہے کہ میری وجہ سے کچھ کھلاڑی پاکستان ٹیم کا حسہ نہیں بن سکے، پاکستان ٹیم کی کارکردگی بہتر بنانے کی کوشش کی، اب ایک نیا چیلنج قبول کیا ہے، رواں سیریز میں حریف ٹیم کا کوچ ہوں، مصباح الحق سے تعلق ہے، رقابت نہیں، میں ان کی بہت عزت کرتا ہوں اور ہم دونوں کے درمیان کوئی کھنچاﺅ نہیں، سیریز میں ان کو بطور حریف دیکھ کر اچھا لگا۔ انہوں نے کہا کہ سری لنکا ایک اچھی ٹیم ہے اور اس میں ٹیلینڈ کھلاڑی موجود ہیں، کراچی ٹیسٹ میں اچھی کارکردگی پیش کرنے کی کوشش ہوگی، پنڈی ٹیسٹ میں عابد علی اور بابر اعظم نے اچھی بیٹنگ کی، خوشی ہے کہ پاکستان میں ٹیسٹ کرکٹ شروع ہوئی۔ ایک سوال کے جواب میں میکی آرتھر نے کہا کہ فواد عالم باصلاحیت کرکٹر ہے لیکن وہ دس برسوں کے دوران پاکستان اسکواڈ میں جگہ نہ پا سکا، میرے ہی نہیں بلکہ دوسرے کوچز کے ادوار میں بھی وہ منتخب نہیں ہوسکا۔

Reference: http://urdu.app.com.pk

Leave a comment

Post here